اوہ خدا اسکا قد کسی طور بهی سوا 6 فٹ سے کم نہیں تها ، 11

اوہ خدا اسکا قد کسی طور بهی سوا 6 فٹ سے کم نہیں تها ،

اوہ خدا اسکا قد کسی طور بهی سوا 6 فٹ سے کم نہیں تها ،

تحریر :علی عباس شاہ

اسکے سارے جسم پر. لمبے سیاہ اور سرمئی بال تهے،چہرے پر خون. میں اٹی لمبی تهوتهن،سر کے بالکل سامنے. کی طرف سرخ اور نارنجی رنگ کے. قبیح امتزاج کی آنکهیں، اوپر کو کهڑے قدرے لمبے.نوکدار کان ،اسکے ہاتهہ انسانوں سے قدرے .مشابہ تهے لیکن بالوں سے بهرے ہوے .اور چاقووں جیسے ناخنوں والے تهے. ،اسکے داہنے ہاتهہ میں بچے کا دل تها جسکے ساتهہ .کوئی 7/8 انچ کی نالیاں لٹکتی نظر آ رہی تهیں. خنکی کی وجہ سے اس دل میں .سے بهاپ نکلتی محسوس ہو رہی تهی .اسکی پتلی مگر مضبوط خمدار ٹانگیں بہت پر اعتماد انداز. میں اسکو سمبهالے کهڑی تهیں،میں بایئبل. پڑهتے ہوے شائد دل ہی دل میں اس لمحے .کو آخری پل مان چکا تها

اور دماغ کے کسی کونے میں یہ بهی تسلیم کر چکا تها کہ میں اس شیطان کا مقابلہ نہیں کر سکتا ،میں خود کو بہت عاجز محسوس کر رہا تها،میں وہاں سے اپنے ساتهی سمیت بهاگ جانا چاہتا تها لیکن ہمارے پاوں وہ زمین چهوڑنے سے انکاری تهے ،یکدم ہم نے کیا دیکها کہ اس درندے نے بچے کے دل کو ہاتهہ سے ہوا میں اچهالا اور ہلکا سا اچک کر منہ سے دبوچ کر نگل گیا اور ساتهہ ہی سارے جنگل میں بهیڑیے کے چیخنے کی کریہہ اور شیطانیت سے بهرپور فاتحانہ آواز گونج گئی  اس چیخ کے صوتی اثرا ت ہمارے جسموں پر موجود ہر بال کو خوف کی شدت سے کهڑا کر چکے تهے ، اچانک اس درندے نے ہماری جانب بڑهنا شروع کیا

اوہ خدا اسکا قد کسی طور بهی سوا 6 فٹ سے کم نہیں تها ،

میں نے بایئبل کو اور تیز کیا میر ے منہ سے ایلی ایلی لما شبختانی کے الفاظ روانی سے نکل رہے تهے ،وہ شیطان جست بهر کر چشم زدن میں ہمارے بالکل سامنے موجود تها میری زبان رک سی گئی تهی ،وہ شائد ہمارے خوف کی اس کیفیت سے لطف اندوز ہو رہا تها ہمیں ڈرانے کے لیے اس نے آگے کو جهکائی لی   ایسے قدآور درندے کے سامنے کون جگر والا ہو گا جو پیروں پر کهڑا رہ سکے گا ،میں گر گیا بائیبل میرے ہاتهہ میں تهی گرتے ہی میرے ہاتهہ سے لالٹین گر کر لڑکهتی ہوی کهائی میں جا گری اس شیطان کے چہرے سے میں ناگواری صاف محسوس کر سکتا تها میں اسی حالت میں اس سے دور جانے کی کوشش کر رہا تها

کہ مجهے اپنے پہلو میں شدید زوردار ٹهوکر محسوس ہوئی اور میں زمین سے کافی بلند ہو کر کسی کهلونے کی طرح گرا اور کهائی میں گرتا چلا گیا  ،مجهےگرتے ہوے اور جب تک میں حواس میں رہا تب تک اونچائی سے اپنے دوسرے ساتهی کی کرب و تکلیف سے بهرپور چیخیں سنائی دیتی رہیں ،مجهے نہیں معلوم مجهے کتنے وقت کے بعد ہوش آئی، جب میں اٹها تو خود کو بستر پر پایا ہلنے کی کوشش پر پتہ چلا ک سارے جسم پر پٹیاں بندهی ہیں اور بازو ٹوٹا ہوا ہے ،کچهہ دیر بعد چند لوگ میرے پاس آے اور مجهے بتایا کہ اس رات کے بعد انہیں وہاں سے 2 ادهڑی ہوئی لاشیں ملیں اور کهائی سے میں ملا کهائی کی کم گہرائی کی وجہ سے میری جان بچ گئ

اوہ خدا اسکا قد کسی طور بهی سوا 6 فٹ سے کم نہیں تها ،

باقی دونوں بیچاروں کی نسبت میں مفت میں بچ گیا تها جس پر میں خداوند کا شکر گزار تها، مجهے پتہ چلا کہ میں قریب 4 دن بے ہوش رہا اور اس عرصے میں اس شیطان نے ایک اور واردات کی ہے ،میرے مطابق صرف جهاڑ پهونک سے اسے ختم یا قابو کرنا ناممکن تها اسی لیے میں وونگ ووڈ سے نکلا تاکہ مدد لا سکوں،میں یورپ کے کچهہ سب سے نامور شکاریوں سے ملا اور انکو منہ مانگے معاوضے پر انکو اس مہم کا حصہ بننے پر راضی کیا آپکے بارے میں سن رکها ہے میں نے ، ایسی ہی پیشکش کے لئے آپکو بلایا ہے .میں بات مکمل کر چکا ہوں انکار یا اقرار کا اختیار آپکو ہے

فادر :مائی چائلڈ جیسن تمہارے  کزن گریفن کی وساطت سے تمہیں غائبانہ طور پر جانتا ہوں پر ہماری یہ پہلی ملاقات ہے میں درخواست کروں گا کہ تم خدا اور خدا کی مخلوق کے کام آو اور یہ پیشکش قبول کرو
جیسن : آپکی کہانی خاصی دلچسپ تهی مسٹر باب مجهے آپکی پیشکش منظور ہے ،امید کرتا ہوں کہ یہ کہانی بهیانک  خواب کی بجائے سچ ہو اور واقعی ویسا درندہ میری بندوق کا شکار ہو
باب: بہت خوب جیسن میں چاہتا ہوں کہ آپ اس مہم کی قیادت کریں اور اپنے حساب سے ٹیم کو منظم کریں ، جو سامان یا چیز آپکو درکار ہو گی اسکے اخراجات وونگ ووڈ اور بڑا گرجہ برداشت کرے گا باقی میری دعا ہو گی کہ ہم سب اس مہم میں کامیاب ہوں اور وہ درندہ آپکی ہی بندوق کا شکار ہو

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں