جنگل ویرانے میں اگر اچانک آپ کو کیمپنگ کرنی پڑ جائے۔ 11

جنگل ویرانے میں اگر اچانک آپ کو کیمپنگ کرنی پڑ جائے۔

جنگل ویرانے میں اگر اچانک آپ کو کیمپنگ کرنی پڑ جائے۔

تو آپ کا خود سے پہلا سوال ہوگا کھانے کا کیا ہوگا.؟ پینے کا کیا ہوگا.؟ رہوں گا کیسے.؟ اور آخری سوال ہوگا کیا یہاں رہنا محفوظ ہے.؟

اس لئے عام لوگ کیمپنگ کیلئے تیار ہو کر جاتے ہیں. اپنے ساتھ کھانے پینے کا سامان ٹینٹ اور اس جگہ کی معلومات لے کر جاتے ہیں. لیکن ایک کیمپنگ کی تربیت ہوتی ہے. اسے survival یعنی بقا کی تربیت کہتے ہیں. اس کے تربیت یافتہ پھر بنا ساز و سامان جنگل ویرانوں میں نکلتے ہیں اور وہاں دستیاب وسائل میں جیتے ہیں. کیونکہ ان کو چیزوں کی نہ صرف پہچان ہوتی ہے بلکہ اسے خود کیلئے قابل استعمال بنانا بھی آتا ہے.

جنگل ویرانے میں اگر اچانک آپ کو کیمپنگ کرنی پڑ جائے۔

ہمارے سکول کالج سے فارغ بچہ جب معاشرے میں نکلتا ہے تو اس کی مثال اس شخص کی طرح ہوتی ہے جو کسی ویرانے میں بنا ساز و ساماں نکل آیا ہو اب ایک خوف اس کے چہرے پر لکھا ہوتا ہے. کھانا پینا رہنا کیسے ہوگا.؟ کیا یہاں جینا ممکن ہے.؟ جنگل ویرانے میں اگر اچانک آپ کو کیمپنگ کرنی پڑ جائے۔

ایک صحت مند اور محنت پر آمادہ نوجوان کیلئے بھلا یہ کوئی سوال ہیں.؟ لیکن یہ سوالات زندگی کا بڑا امتحان اس لئے بن جاتے ہیں کیونکہ ہم نے سالوں تک ان بچوں کو پتہ نہیں کیا کیا پڑھایا ہوتا ہے لیکن ان کو بقا کیلئے جینا نہیں سکھایا ہوتا. جنگل ویرانے میں اگر اچانک آپ کو کیمپنگ کرنی پڑ جائے۔

ریاض علی خٹک

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں